Punjab Ke Peerzadon Se

Tags

پنچاب کےپيرزادوں سے



حاضر ہوا ميں شيخ مجدد کي لحد پر
وہ خاک کہ ہے زير فلک مطلع انوار
اس خاک کے ذروں سے ہيں شرمندہ ستارے
اس خاک ميں پوشيدہ ہے وہ صاحب اسرار
گردن نہ جھکي جس کي جہانگير کے آگے
جس کے نفس گرم سے ہے گرمي احرار
وہ ہند ميں سرمايہء ملت کا نگہباں
اللہ نے بر وقت کيا جس کو خبردار
کي عرض يہ ميں نے کہ عطا فقر ہو مجھ کو
آنکھيں مري بينا ہيں ، و ليکن نہيں بيدار
آئي يہ صدا سلسلہء فقر ہوا بند
ہيں اہل نظر کشور پنجاب سے بيزار
عارف کا ٹھکانا نہيں وہ خطہ کہ جس ميں
پيدا کلہ فقر سے ہو طرئہ دستار

باقي کلہ فقر سے تھا ولولہء حق
طروں نے چڑھايا نشہء 'خدمت سرکار


EmoticonEmoticon