Dr. Allama Muhammad Iqbal is the national poet of Pakistan. He was born on 9th November, 1877. This blog is about the life and poetry of Allama Iqbal. This Blog has the poerty of Iqbal in Urdu, Roman Urdu and English translation.

Post Top Ad

Post Top Ad

Yeh Peyaam De Gai..

يہ پيام دے گئی ہے مجھے باد صبح گاہی


يہ پيام دے گئی ہے مجھے باد صبح گاہی
کہ خودی کے عارفوں کا ہے مقام پادشاہی
تری زندگی اسی سے ، تری آبرو اسی سے
جو رہی خودی تو شاہی ، نہ رہی تو روسياہی
نہ ديا نشان منزل مجھے اے حکيم تو نے
مجھے کيا گلہ ہو تجھ سے ، تو نہ رہ نشيں نہ راہی
مرے حلقہ سخن ميں ابھی زير تربيت ہيں
وہ گدا کہ جانتے ہيں رہ و رسم کجکلاہی
يہ معاملے ہيں نازک ، جو تری رضا ہو تو کر
کہ مجھے تو خوش نہ آيا يہ طريق خانقاہی
تو ہما کا ہے شکاری ، ابھی ابتدا ہے تيری
نہيں مصلحت سے خالی يہ جہان مرغ و ماہی
تو عرب ہو يا عجم ہو ، ترا لا الہ الا
لغت غريب ، جب تک ترا دل نہ دے گواہی

No comments:

Post a Comment