Fitrat Ko Khard Ke Rubroo Kr

Tags

فطرت کو خرد کے روبرو کر


فطرت کو خرد کے روبرو کر
تسخير مقام رنگ و بو کر
تو اپنی خودی کو کھو چکا ہے
کھوئی ہوئی شے کی جستجو کر
تاروں کی فضا ہے بيکرانہ
تو بھی يہ مقام آرزو کر
عرياں ہيں ترے چمن کی حوريں
چاک گل و لالہ کو رفو کر
بے ذوق نہيں اگرچہ فطرت
جو اس سے نہ ہو سکا ، وہ تو کر


EmoticonEmoticon