Dil e Bedar Farooqi..

Tags

دل بيدار فاروقی ، دل بيدار کراری


دل بيدار فاروقی ، دل بيدار کراری
مس آدم کے حق ميں کيميا ہے دل کی بيداری
دل بيدار پيدا کر کہ دل خوابيدہ ہے جب تک
نہ تيری ضرب ہے کاری ، نہ ميری ضرب ہے کاری
مشام تيز سے ملتا ہے صحرا ميں نشاں اس کا
ظن و تخميں سے ہاتھ آتا نہيں آہوئے تاتاری
اس انديشے سے ضبط آہ ميں کرتا رہوں کب تک
کہ مغ زادے نہ لے جائيں تری قسمت کی چنگاری
خداوندا يہ تيرے سادہ دل بندے کدھر جائيں
کہ درويشی بھی عياری ہے ، سلطانی بھی عياری
مجھے تہذيب حاضر نے عطا کی ہے وہ آزادی
کہ ظاہر ميں تو آزادی ہے ، باطن ميں گرفتاری
تو اے مولائے يثرب! آپ ميری چارہ سازی کر
مری دانش ہے افرنگی ، مرا ايماں ہے زناری


EmoticonEmoticon