Shukar o Shikayt

Tags

شکر و شکايت



ميں بندہ ناداں ہوں، مگر شکر ہے تيرا
رکھتا ہوں نہاں خانہ لاہوت سے پيوند

اک ولولہ تازہ ديا ميں نے دلوں کو
لاہور سے تا خاک بخارا و سمرقند

تاثير ہے يہ ميرے نفس کی کہ خزاں ميں
مرغان سحر خواں مری صحبت ميں ہيں خورسند

ليکن مجھے پيدا کيا اس ديس ميں تو نے
جس ديس کے بندے ہيں غلامی پہ رضا مند


EmoticonEmoticon