Khird Ke Pas Khabr Ke..

Tags

خرد کے پاس خبر کے سوا کچھ اور نہيں


خرد کے پاس خبر کے سوا کچھ اور نہيں
ترا علاج نظر کے سوا کچھ اور نہيں
ہر اک مقام سے آگے مقام ہے تيرا
حيات ذوق سفر کے سوا کچھ اور نہيں
گراں بہا ہے تو حفظ خودی سے ہے ورنہ
گہر ميں آب گہر کے سوا کچھ اور نہيں
رگوں ميں گردش خوں ہے اگر تو کيا حاصل
حيات سوز جگر کے سوا کچھ اور نہيں
عروس لالہ! مناسب نہيں ہے مجھ سے حجاب
کہ ميں نسيم سحر کے سوا کچھ اور نہيں
جسے کساد سمجھتے ہيں تاجران فرنگ
وہ شے متاع ہنر کے سوا کچھ اور نہيں
بڑا کريم ہے اقبال بے نوا ليکن
عطائے شعلہ شرر کے سوا کچھ اور نہيں


EmoticonEmoticon