Jab Ishq Sikhata Hai Aadaab..

Tags

جب عشق سکھاتا ہے آداب خود آگاہی


جب عشق سکھاتا ہے آداب خود آگاہی
کھلتے ہيں غلاموں پر اسرار شہنشاہی
عطار ہو ، رومی ہو ، رازی ہو ، غزالی ہو
کچھ ہاتھ نہيں آتا بے آہ سحر گاہی
نوميد نہ ہو ان سے اے رہبر فرزانہ!
کم کوش تو ہيں ليکن بے ذوق نہيں راہی
اے طائر لاہوتی! اس رزق سے موت اچھی
جس رزق سے آتی ہو پرواز ميں کوتاہی
دارا و سکندر سے وہ مرد فقير اولی
ہو جس کی فقيری ميں بوئے اسد اللہی
آئين جوانمردں ، حق گوئی و بے باکی
اللہ کے شيروں کو آتی نہيں روباہی


EmoticonEmoticon