Aijaaz Hai Kisi Ka Ya Gardish e Zamana

Tags

اعجاز ہے کسی کا يا گردش زمانہ


اعجاز ہے کسی کا يا گردش زمانہ
ٹوٹا ہے ايشيا ميں سحر فرنگيانہ
تعمير آشياں سے ميں نے يہ راز پايا
اہل نوا کے حق ميں بجلی ہے آشيانہ
يہ بندگی خدائی ، وہ بندگی گدائی
يا بندہ خدا بن يا بندہ زمانہ
غافل نہ ہو خودی سے ، کر اپنی پاسبانی
شايد کسی حرم کا تو بھی ہے آستانہ
اے لا الہ کے وارث! باقی نہيں ہے تجھ ميں
گفتار دلبرانہ ، کردار قاہرانہ
تيری نگاہ سے دل سينوں ميں کانپتے تھے
کھويا گيا ہے تيرا جذب قلندرانہ
راز حرم سے شايد اقبال باخبر ہے
ہيں اس کی گفتگو کے انداز محرمانہ


EmoticonEmoticon